May 26, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/protect-the-arctic.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
 غزہ   جنگ‘ اسرائیل کی حمایت میں کمی آ رہی ہے، سربراہ خارجہ پالیسی یورپی یونین 

 برسلز (آئی این پی ) یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے سربراہ جوزف بورل نے غزہ میں اسرائیل کے ہاتھوں قتل عام   پر  کہا ہے  کہ آج غزہ کی جنگ کی وجہ سے اسرائیلی  حکومت کے بارے میں دنیا کا زاویہ نگاہ تبدیل ہو رہا ہے، تل ابیب کی حمایت میں کمی آ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا بھر کے عوام اس چیز کی جانب سے تشویش میں مبتلا ہیں جسے میں یقین کے ساتھ قتل عام کہہ سکتا ہوں۔جوزف بورل نے کہا کہ تیس ہزار سے زیادہ عام شہری مارے جا چکے ہیں جو کہ تصور سے بالاتر ہے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ یورپی یونین میں فلسطین کے مسئلے کے لئے کچھ ترجیحات کو مدنظر رکھا گیا ہے جس میں دو ریاستی راہ حل شامل ہے جس کے تحت فلسطینیوں کو اپنی سرزمین اور حکومت رکھنے کا حق حاصل ہوگا۔جوزف بورل نے غزہ میں انسانی بحران پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیلی حکومت بھوک کو ایک ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ لاکھوں لوگ حقیقی معنوں میں بھوک کی موت مر رہے ہیں اور بہت سے بچے بھی غذائی قلت کی وجہ سے اپنی جان سے ہاتھ دھو چکے ہیں۔انہوں نے غزہ میں امداد رسانی میں اسرائیل کی جانب سے کھڑی کی گئی روکاوٹ کو خوراک اور بھوک مری کی بنیادی وجہ قرار دیا اور کہا کہ اسی لئے کہا جا سکتا ہے کہ اسرائیل بھوک کو ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس بات کے بہت سے ثبوت موجود ہیں کہ سرحدوں پر رکاوٹوں کی وجہ سے امدادی سامان غزہ میں پہنچ نہیں پا رہا ہے اور اس سلسلے میں اسرائیل کے دعووں کو قبول نہیں کیا جاسکتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *